Silsila Ta‘limat-e-Islam (10): Bachon ki Parwarish awr Walidayn ka Kirdar

مصادر و مراجع

1۔ القرآن الحکیم

2۔ ابن اثیر، ابو السعادات مبارک بن محمد بن محمد بن عبد الکریم بن عبدالواحد شیبانی جزری (544۔606ھ/1149۔1210ء)۔ النہایہ فی غریب الحدیث والأثر۔ قم، ایران: مؤسسہ مطبوعاتی اسماعیلیان، 1364ھ۔

3۔ احمد بن حنبل، ابو عبد اﷲ ابن محمد (164-241ھ/780-855ء)۔ المسند۔ مصر: مؤسسۃ قرطبہ

4۔ اسحاق بن راہویہ، اسحاق بن ابراہیم بن مخلد بن راہویہ الحنظلی (161-238ھ)۔ المسند۔ المدینۃ المنورۃ: مکتبۃ الایمان، 1412ھ/1991ء۔

5۔ اسماعیلی، ابوبکر احمد بن ابراھیم بن اسماعیل (277۔371ھ)۔ معجم الشیوخ/المعجم فی أسامی شیوخ ابی بکر الاسماعیلی۔ مدینہ منورہ،سعودی عرب:مکتبۃ العلوم والحکم، 1410ھ۔

6۔ بخاری، ابو عبد اللہ محمد بن اسماعیل بن ابراہیم بن مغیرہ (194-256ھ/810- 870ء)۔ الأدب المفرد۔ بیروت، لبنان: دار البشائر الاسلامیہ، 1409ھ/1989ء۔

7۔ بخاری، ابو عبد اللہ محمد بن اسماعیل بن ابراہیم بن مغیرہ (194-256ھ/810- 870ء)۔ الصحیح۔ دمشق، بیروت: دار ابن کثیر، 1414ھ/1993ء۔

8۔ بزار، ابو بکر احمد بن عمرو بن عبد الخالق بصری (210-292ھ/ 825-905ء)۔ المسند۔ بیروت، لبنان: مؤسسۃ علوم القرآن، 1409ھ۔

9۔ ابن بکیر، ابو عبداللہ الحسین بن احمد بن عبد اللہ بن بکیر البغدادی الصیرفی(م 338ھ)۔ فضائل التسمیۃ بأحمد و محمد۔ طنطا: الصحابۃ للتراث،1411ھ/1990ء۔

10۔ بیہقی، ابو بکر احمد بن حسین بن علی بن عبد اللہ بن موسیٰ (384۔458ھ/994۔ 1066ء)۔ السنن الصغری۔ مدینہ منورہ، سعودی عرب: مکتبۃ الدار، 1410ھ/ 1989ء۔

11۔ بیہقی، ابو بکر احمد بن حسین بن علی بن عبد اللہ بن موسیٰ (384-458ھ/ 994- 1066ء)۔ السنن الکبری۔ مکہ مکرمہ، سعودی عرب: مکتبہ دار الباز، 1414ھ/ 1994ء۔

12۔ بیہقی، ابو بکر احمد بن حسین بن علی بن عبد اﷲ بن موسیٰ (384-458ھ/ 994- 1066ء)۔ شعب الإیمان۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1410ھ/ 1990ء۔

13۔ ترمذی، ابو عیسیٰ محمد بن عیسیٰ بن سورہ بن موسیٰ بن ضحاک (209-279ھ/ 825-892ء)۔ السنن۔ بیروت، لبنان: دار إحیاء التراث العربی۔

14۔ تمام رازی، أبو القاسم تمام بن محمد الرازی(330۔414ھ)۔ کتاب الفوائد۔ ریاض، سعودی عرب: مکتبۃ الرشد، 1412ھ۔

15۔ حاکم، ابو عبد اﷲ محمد بن عبد اﷲ بن محمد (321-405ھ/ 933-1014ء)۔ المستدرک علی الصحیحین۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1411ھ/ 1990ء۔

16۔ ابن حبان، ابو حاتم محمد بن حبان بن احمد بن حبان (270-354ھ/ 884- 965ء)۔ الصحیح۔ بیروت، لبنان: مؤسسۃ الرسالہ، 1414ھ/ 1993ء۔

17۔ ابن حجر عسقلانی، احمد بن علی بن محمد بن محمد بن علی بن احمد کنانی (773۔852ھ/1372۔ 1449ء)۔ تلخیص الحبیر فی أحادیث الرافعی الکبیر۔ مدینہ منورہ، سعودی عرب، 1384ھ/1964ء۔

18۔ ابن حجر عسقلانی، احمد بن علی بن محمد بن محمد بن علی بن احمد کنانی (773-852ھ/ 1372-1449ء)۔ فتح الباري شرح صحیح البخاري۔ لاہور، پاکستان: دار نشر الکتب الاسلامیہ، 1401ھ/ 1981ء۔

19۔ ابن حجر عسقلانی، احمد بن علی بن محمد بن محمد بن علی بن احمد کنانی (773۔852ھ/ 1372۔1449ء)۔ المطالب العالیۃ۔ بیروت، لبنان: دار المعرفۃ، 1407ھ/1978ء۔

20۔ حلبی، علی بن برہان الدین (1404ھ)۔ السیرۃ الحلبیۃ۔ بیروت، لبنان، دارالمعرفہ، 1400ھ۔

21۔ حمیدی، ابو بکر عبداللہ بن زبیر (219ھ/834ء)۔ المسند۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ + قاہرہ، مصر: مکتبۃ المنتبی۔

22۔ ابن حیان، ابو محمد عبد اللہ بن محمد بن جعفر بن حیان الأنصاری (274۔ 369ھ)۔ طبقات المحدثین بأصبہان والواردین علیہا۔ بیروت، لبنان: مؤسسۃ الرسالۃ، 1412ھ۔

23۔ ابن خزیمہ، ابو بکر محمد بن اسحاق (223-311ھ/ 838-924ء)۔ الصحیح۔ بیروت، لبنان: المکتب الاسلامی، 1390ھ/1970ء۔

24۔ خطیب تبریزی، ولی الدین ابو عبد اللہ محمد بن عبد اللہ (741ھ)۔ مشکوٰۃ المصابیح۔ بیروت، لبنان، دار الکتب العلمیۃ، 1424ھ/2003ء۔

25۔ دارمی، ابو محمد عبد اﷲ بن عبد الرحمن (181-255ھ/797-869ء)۔ السنن۔ بیروت، لبنان: دار الکتاب العربی، 1407ھ۔

26۔ ابو داؤد، سلیمان بن اشعث سبحستانی (202-275ھ/817-889ء)۔ السنن۔ بیروت، لبنان: دار الفکر، 1414ھ/ 1994ء۔

27۔ دمیاطی، ابی بکر السید محمد شطا الدمیاطی۔ إعانۃ الطالبین۔ بیروت: دارالفکر للطباعۃ والنشر والتوزیع۔

28۔ ابن ابی دنیا، ابو بکر عبداللہ بن محمد بن عبید قرشی بغدادی (م 281ھ)۔ العیال۔ سعودیہ: دار ابن قیم، 1410ھ/1990ء۔

29۔ دیلمی، ابو شجاع شیرویہ بن شہردار بن شیرویہ ہمذانی (445-509ھ/ 1053- 1115ء)۔ الفردوس بمأثور الخطاب۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1986ء۔

30۔ دیلمی، ابو شجاع شیرویہ بن شہردار بن شیرویہ الدیلمی الہمذانی (445۔509ھ/ 1053۔ 1115ء)۔ مسند الفردوس۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1986ء۔

31۔ دینوری، ابو بکر احمد بن مروان بن محمد القاضی المالکی (م 333ھ)۔ المجالسۃ وجواہر العلم۔ لبنان، بیروت، 1423ھ/2002ء۔

32۔ ذہبی، شمس الدین محمد بن احمد بن عثمان (673۔748ھ/ 1274۔1348ء)۔ الکبائر۔ بیروت، لبنان: دار الندوۃ الجدیدۃ۔

33۔ سبکی، تاج الدین بن علی بن عبد الکافی (727-771ھ)۔ طبقات الشافعیۃ الکبری۔ ہجر للطباعۃ والنشر، 1413ھ۔

34۔ سخاوی، الحافظ شمس الدین محمد بن عبد الرحمن (831-902ھ)۔ البلدانیات۔ السعودیۃ: دارالعطاء، 1422ھ/2001ء۔

35۔ سرخسی، شمس الدین ابو بکر محمد بن اسماعیل۔ المبسوط۔ بیروت، لبنان: دار المعرفہ للطباعہ و النشر، 1406ھ۔

36۔ ابن السنی، احمد بن محمد بن اسحاق دینوری شافعی (م364ھ)۔ عمل الیوم واللیلۃ۔ جدہ، سعودی عرب/ بیروت، لبنان: دار القبلۃ للثقافۃ۔

37۔ سیوطی، جلال الدین ابو الفضل عبد الرحمن بن ابی بکر بن محمد بن ابی بکر بن عثمان (849۔911ھ/1445۔1505ء)۔ الخصائص الکبریٰ۔ فیصل آباد، پاکستان: مکتبہ نوریہ رضویہ۔

38۔ سیوطی، جلال الدین عبد الرحمن بن ابی بکر (849-911ھ)۔ اللآليء المصنوعۃ۔ بیروت: دارالکتب العلمیہ، 1417ھ/1996ء۔

39۔ ابن ابی شیبہ، ابو بکر عبد اﷲ بن محمد بن ابراہیم بن عثمان کوفی (159-235ھ/ 776-849ء)۔ المصنف۔ ریاض، سعودی عرب: مکتبۃ الرشد، 1409ھ۔

40۔ طبرانی، ابو القاسم سلیمان بن احمد بن ایوب بن مطیر اللخمی (260-360ھ/ 873-971ء)۔ المعجم الأوسط۔ قاہرہ، مصر: دار الحرمین، 1415ھ۔

41۔ طبرانی، ابو القاسم سلیمان بن احمد بن ایوب (260-360ھ/ 873-971ء)۔ المعجم الکبیر۔ موصل، عراق: مکتبۃ الزہراء، 1404ھ/ 1983ء۔

42۔ طبری، ابو جعفر محمد بن جریر بن یزید (224-310ھ/839-923ء)۔ تاریخ الأمم والملوک۔ بیروت، لبنان: دارالکتب العلمیہ، 1407ھ۔

43۔ طحاوی، ابو جعفر احمد بن محمد بن سلامہ بن سلمہ بن عبد الملک بن سلمہ (229۔321ھ/ 853۔933ء)۔ شرح معانی الآثار۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1399ھ۔

44۔ طیالسی، ابو داؤد سلیمان بن دائود جارود (133-204ھ/751-819ء)۔ المسند۔ بیروت، لبنان: دار المعرفہ۔

45۔ ابن عابدین شامی، محمد بن محمد امین بن عمر بن عبدالعزیز دمشقی (1244-1306ھ)۔ رد المختار علی الدرالمختار۔ کوئٹہ ، پاکستان: مکتبہ ماجدیہ، 1399ھ۔

46۔ ابن عبد البر، ابو عمر یوسف بن عبد اللہ بن محمد (368۔463ھ/979۔1071ء)۔ التمہید۔ مغرب (مراکش): وزات عموم الأوقاف و الشؤون الإسلامیہ، 1387ھ۔

47۔ عبد الرزاق، ابو بکر بن ہمام بن نافع صنعانی (126-211ھ/ 744-826ء)۔ المصنف۔ بیروت، لبنان: المکتب الاسلامی، 1403ھ۔

48۔ عجلونی، ابو الفداء اسماعیل بن محمد بن عبد الہادی بن عبد الغنی جراحی (1087۔ 1162ھ/1676۔1749ء)۔ کشف الخفا و مزیل الالباس۔ بیروت، لبنان: مؤسسۃ الرسالہ، 1405ھ۔

49۔ ابن عساکر، ابو قاسم علی بن الحسن بن ہبۃ اللہ بن عبد اللہ بن حسین دمشقی الشافعی (499-571ھ/ 1105-1176ء)۔ تاریخ مدینۃ دمشق المعروف بـ: تاریخ ابن عساکر۔ بیروت، لبنان: دار الفکر، 1995ء۔

50۔ ابو عوانہ، یعقوب بن اسحاق بن إبراہیم بن زید نیشاپوری (230۔316ھ/845۔ 928ء)۔ المسند۔ بیروت، لبنان: دار المعرفہ، 1998ء۔

51۔ غزالی، ابو حامد محمد بن محمد (450۔505ھ)۔ إحیاء علوم الدین۔ بیروت، لبنان: دار المعرفۃ۔

52۔ ابن قدامہ، ابو محمد عبداﷲ بن احمد المقدسی (620ھ)۔ المغنی فی فقہ الامام احمد بن حنبل الشیبانی۔ ریاض، سعودی عرب: مکتبہ الریاض الحدیثہ، 1400ھ/ 1980ء۔

53۔ قضاعی، ابو عبد اللہ محمد بن سلامہ بن جعفر (م454ھ)۔ مسند الشہاب۔ بیروت، لبنان: مؤسسۃ الرسالہ، 1407ھ/ 1986ء۔

54۔ ابن قیم، محمد بن ابی بکر بن ایوب بن سعد شمس الدین الجوزیۃ (م 751ھ)۔ تحفۃ المودود بأحکام المولود۔ دمشق: دارالبیان، 1391ھ/1971ء۔

55۔ کاسانی، علاؤ الدین ابو بکر (م 587ھ)۔ بدائع الصنائع۔ کراچی، پاکستان: ایچ ایم سعید کمپنی۔

56۔ ابن کثیر، ابو الفداء اسماعیل بن عمر (701۔774ھ/1301۔1373ء)۔ البدایہ و النہایہ۔ بیروت، لبنان: دار الفکر، 1419ھ/1998ء۔

57۔ ابن ماجہ، ابو عبد اﷲ محمد بن یزید قزوینی (207-275ھ/ 824-887ء)۔ السنن۔ بیروت، لبنان: دار الفکر۔

58۔ مالک، ابن انس بن مالک بن ابی عامر بن عمرو بن حارث اصبحی (93-179ھ/712- 795ء)۔ الموطأ۔ بیروت، لبنان: دار إحیاء التراث العربی، 1406ھ/ 1985ء۔

59۔ ابن مبارک، ابو عبد الرحمن عبد اللہ بن واضح مروزی (118۔181ھ/736۔ 798ء)۔ المسند۔ ریاض، سعودی عرب: مکتبۃ المعارف، 1407ھ۔

60۔ مرغینانی، برہان الدین ابو الحسن علی بن ابی بکر۔ الہدایہ۔ کراچی، پاکستان: محمد علی کارخانہ اسلامی کتب۔

61۔ مرغینانی، برہان الدین ابو الحسن علی بن ابی بکر۔ الہدایۃ شرح بدایۃ المبتدی۔ کراچی، پاکستان: محمد علی کارخانہ اسلامی کتب۔

62۔ مسلم، ابن الحجاج قشیری (206-261ھ/821-875ء) ۔الصحیح۔ بیروت، لبنان: دار احیاء التراث العربی۔

63۔ مقدسی، محمد بن طاہر المقدسی (448-507ھ)۔ ذخیرۃ الحفاظ۔ الریاض: دارالسلف،1416ھ/1996ء۔

64۔ ملا علی قاری، نور الدین بن سلطان محمد ہروی حنفی (م 1014ھ/1606ء)۔ مرقاۃ المفاتیح شرح مشکوٰۃ المصابیح۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1422ھ/2001ء۔

65۔ مناوی، الامام الحافظ زین الدین عبد الرؤوف(م 1031ھ)۔ التیسیر بشرح الجامع الصغیر۔ الریاض: مکتبۃ الامام الشافعي، 1408ھ/1988ء۔

66۔ مناوی، عبدالرؤف بن تاج العارفین بن علی بن زین العابدین (952-1031ھ/ 1545-1621ء)۔ فیض القدیر شرح الجامع الصغیر۔ مصر: مکتبہ تجاریہ کبریٰ، 1356ھ۔

67۔ ابن منظور افریقی، امام العلامۃ ابو الفضل جمال الدین محمد بن مکرم بن منظور المصری (711ھ)۔ لسان العرب۔ بیروت، لبنان: دار صادر۔

68۔ نسائی، ابو عبد الرحمن احمد بن شعیب بن علی (215-303ھ/ 830-915ء)۔ السنن۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1416ھ/ 1995ء۔

69۔ نسائی، ابو عبد الرحمن احمد بن شعیب (215-303ھ/ 830-915ء)۔ السنن الکبری۔ بیروت، لبنان: دار الکتب العلمیہ، 1411ھ/ 1991ء۔

70۔ نظام الدین، شیخ(م 1161ھ)۔فتاوی ھندیہ المعروف فتاوی عالمگیر۔ بیروت، لبنان، دار احیاء، 1423ھ

71۔ ہندی، حسام الدین، علاء الدین علی متقی (م 975ھ)۔ کنز العمّال فی سنن الأقوال والأفعال۔ بیروت، لبنان: دارالکتب العلمیہ، 1419ھ/1989ء۔

72۔ ہیثمی، نور الدین ابو الحسن علی بن ابی بکر بن سلیمان (735-807ھ/ 1335- 1405ء)۔ مجمع الزوائد ومنبع الفوائد۔ قاہرہ، مصر: دار الریان للتراث + بیروت، لبنان: دار الکتاب العربی، 1407ھ/1987ء۔

73۔ ابو یعلی، احمد بن علی بن مثنی بن یحییٰ بن عیسیٰ بن ہلال موصلی تمیمی (210-307ھ/ 825-919ء)۔ المسند۔ دمشق، شام: دار المأمون للتراث، 1404ھ/ 1984ء۔

کتبِ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری

1۔ عرفانُ القرآن (اُردو ترجمہ قرآنِ حکیم)

2۔ اَلمِنْھَاجُ السَّوِيّ مِنَ الْحَدِیْثِ النَّـبَوِيّ

3۔ ھِدَایَۃُ الْأُمَّۃ عَلٰی مِنْھَاجِ الْقُرْآنِ وَالسُّنَّۃ

4۔ مَعَارِجُ السُّنَنِ لِلنَّجَاۃِ مِنَ الضَّلَالِ وَالْفِتَنِ

5۔ اسلام میں انسانی حقوق

6۔ حقوقِ والدین

7۔ اسلامی معاشرہ میں عورت کا مقام

8۔ اسلام میں خواتین کے حقوق

9۔ عصرِ حاضر کے جدید مسائل اور ڈاکٹر محمد طاہر القادری

10۔ حضور نبی اکرم ﷺ کا طریقۂ نماز {الصَّـلَاۃُ عِنْدَ الْحَنَفِیَّۃِ فِي ضَوئِ السُّنَّۃِ النَّبَوِیَّۃِ}

11۔ اَلدَّعَوَاتُ وَالْأَذْکَارُ مِنْ سُنَّۃِ النَّبِيِّ الْمُخْتَار ﷺ {مسنون دعاؤں اور اَذکار پر مشتمل مجموعہ آیات و اَحادیث}

12۔ اِنسانی حقوق و آداب … اَحادیثِ نبوی کی روشنی میں {اللُّبَابُ فِي الْحُقُوْقِ وَالآدَابِ}

13۔ دعا اور آدابِ دعا

14۔ حسنِ اَعمال

15۔ حسنِ اَحوال

16۔ حسنِ اَخلاق

17۔ نوجوان نسل دین سے دُور کیوں؟

18۔ حقوقِ والدین

19۔ اِسلامی معاشرہ میں عورت کا کردار

20۔ اِسلام میں بچوں کے حقوق

21۔ اِسلام میں عمر رسیدہ اور معذور اَفراد کے حقوق

خطاباتِ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری

1۔ Ei–10: انسانی تربیت کس طرح ممکن ہے؟

2۔ Ea–26: سیرت کیا ہے او رکیسے بنتی ہے؟

3۔ Ei–4: تعلیم و تربیت کا نبوی طریق

4۔ Id–21: تربیت کا روحانی منہج

5۔ Ha–88: تربیتِ اولاد میں والدین کا کردار (ڈاکٹر حسین محی الدین)

6۔ Ha–14: حقوقِ اولاد (اسلام اور ہماری زندگی)

7۔ Ec–81: نسبت و عشقِ مصطفی ﷺ کا فروغ

8۔ Et–13: ربطِ رسالت بذریعہ میلاد مصطفی ﷺ

9۔ Eu–67: حضور ﷺ سے تعلق کا واحد ذریعہ درود و سلام محبت

10۔ Et–4: حفاظتِ ایمان اور تعلق بالرسالت

11۔ Ka–15: ذکر سیرت الرسول ﷺ

12۔ Ed–17: حضور ﷺ کا بچپن

13۔ Eq–22: حضور ﷺ کے پسندیدہ کھانے

14۔ Fg–13: طہارت کیا ہے؟

15۔ Ka–1: نماز بطور تربیت

16۔ Fm–32: حسنِ اَخلاق: اُخوت و محبت

17۔ En–8: آدابِ مجلس

18۔ Ft–18: دعا اور آدابِ دعا

Copyrights © 2022 Minhaj-ul-Quran International. All rights reserved