امہات المومنین رضی اللہ عنہن کے فضائل و مناقب

ام المؤمنین حضرت میمونہ رضی اللہ عنہا کے مناقب کا بیان

8. فَصْلٌ فِي مَنَاقِبِ أُمِّ الْمُؤْمِنِيْنَ مَيْمُوْنَةَ بِنْتِ الْحَارِثِ رضی الله عنها

(اُمّ المؤمنین حضرت میمونہ رضی الله عنہا کے مناقب کا بیان)

64. عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللهِ ﷺ: الْأَخَوَاتُ مُؤمِنَاتٌ: مَيمُونَةُ زَوْجُ النَّبِيِ ﷺ، وَ أُخْتُهَا أُمُّ الفَضْلِ بِنْتُ الْحَارِثِ، وَ أُخْتُهَا سَلْمَي بِنْتُ الْحَارِثِ امْرَأَةُ حَمْزَةَ، وَ أَسْمَاءُ بِنْتُ عَمِيْسٍ أُخْتُهُنَّ لِأُمِّهِنَّ. رَوَاهُ النَّسَائِيُّ وَالْحَاکِمُ وَاللَّفْظُ لَهُ وَالطَّبَرَانِيُّ.

وَقَالَ الْحَاکِمُ: هَذَا حَدِيْثٌ صَحِيْحٌ.

’’حضرت عبدالله بن عباس رضی الله عنہما بیان کرتے ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: تمام مومن عورتیں آپس میں بہنیں ہیں (پھر فرمایا) ام المومنین میمونہ، اس کی بہن ام فضل بنت حارث، اور اس کی بہن سلمی بنت حارث حمزہ کی بیوی اور اسماء بنت عمیس ان کی اخیافی بہن ہے۔‘‘ اس حدیث کو امام نسائی، حاکم، اور طبرانی نے روایت کیا ہے نیز الفاظ امام حاکم کے ہیں۔

الحديث رقم 64: أخرجه الحاکم في المستدرک، 4 / 35، الرقم: 6801، و النسائي في السنن الکبري، 5 / 103، الرقم: 8387، و الطبراني في المعجم الکبير، 11 / 415، الرقم: 12178، و الهيثمي في مجمع الزوائد، 9 / 249.

Copyrights © 2021 Minhaj-ul-Quran International. All rights reserved